طلاق کے بعد انکے پوری دنیا میں کام کرنے والے خیراتی ادارے کا کیا بنے گا ؟

لندن (ویب ڈیسک) دنیا کی بڑی ٹیکنالوجی کمپنی کے شریک بانی بل گیٹس اور ان کی اہلیہ ملینڈا گیٹس کی شادی کے 27 برس بعد طلاق کی خبروں نے دنیا بھر میں ہلچل مچا دی ہے۔ اور سب لوگ ایک ہی سوال پوچھ رہے ہیں کہ اس جوڑے کی علیحدگی کے بعد اُن کے بڑے خیراتی ادارے

’بل اینڈ ملینڈا گیٹس فاؤنڈیشن‘ کا کیا ہو گا؟مائیکرو سافٹ کے شریک بانی بل گیٹس کا جہاں ٹیکنالوجی کی دنیا میں بڑا نام ہے وہیں ان کی اہلیہ ملینڈا بھی عالمی سطح پر صحت کی شعبے میں اہم کردار ادا کرتی ہیں۔اپنی نوعیت کا سب سے بڑا نجی خیراتی ادارہ بل اینڈ ملینڈا گیٹس فاؤنڈیشن، عالمی سطح پر غربت اور موذی و وبائی امراض کے خاتمے کی کوششوں کے منصوبوں پر سالانہ اربوں ڈالرز خرچ کرتا ہے۔ پاکستان میں پولیو کی مہموں پر اٹھنے والے اخراجات کا بڑا حصہ یہی فاؤنڈیشن براشت کرتی ہے۔اپنی طلاق کے متعلق اعلان کے بیان میں جوڑے نے کہا ہے کہ ’علیحدگی کے باوجود وہ فاونڈیشن میں ایک ساتھ کام کرتے رہیں گے۔‘گیٹس فاؤنڈیشن کے ترجمان کا کہنا ہے کہ بل اور ملینڈا دونوں اس کے شریک سربراہ اور ٹرسٹی کے حیثیت سے موجود رہیں گے۔انسائڈ فلونتھراپی نیوز ویب سائٹ کے بانی اور ایڈیٹر ڈیوڈ کلاہان نے بتایا کہ وہ امید کرتے ہیں کہ گیٹس فاؤڈیشن اپنا کام جاری رکھے گی۔ان کا کہنا تھا کہ ’یہ کوئی معمولی خاندانی تنظیم نہیں ہے جو شادی ختم ہونے کے بعد ختم ہو جائے گی، یہ ایک بڑی اور پیشہ وارنہ تنظیم ہے۔‘وہ کہتے ہیں کہ ’انھوں نے گذشتہ 20 برسوں میں اس تنظیم کو بنیاد سے تعمیر کیا ہے، ان کی اس سے گہری وابستگی ہے، اس بات کا امکان نہیں ہے کہ ان میں سے کسی کو ‘یہ دیکھ کر خوشی ہوگی کہ وہ اپنے کام کو جاری نہیں رکھتے۔‘یاد رہے کہ چند روز قبل بل گیٹس اور میلنڈا گیٹس میں 27 سال کی رفاقت کے بعد علیحدگی کا اعلان سامنے آیا تھا ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.