بھارت میں آکسیجن کی کمی چین کو اتنا بڑا آرڈر دیدیا کہ حیرت کی انتہا نہ رہے

نئی دہلی ،واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک ، این این آئی) بھارت میں تعینات چینی سفیر سن وی ڈونگ کے مطابق گزشتہ کچھ دنوں کے دوران انڈیا سے آکسیجن کنسنٹریٹر کے 25 ہزار آرڈرز دیے گئے ہیں۔ چین کے میڈیکل سپلائرز بھارت کے آرڈر پورے کرنے کیلئے اوور ٹائم کر رہے ہیں۔سن وی ڈونگ نے مزیدبتایا کہ بھارت کو طبی سامان کی فراہمی کیلئے

کارگو طیاروں کے استعمال پر غور کیا جا رہا ہے۔دوسری جانب امریکا نے کورونا وائرس کی وبا سے دنیا کے دوسرے سب سے زیادہ متاثرہ ملک بھارت کے لیے فوری کورونا ٹیسٹ، حفاظتی ماسک اور دوسرے ساز و سامان کی صورت میں سو ملین ڈالر سے زائد کی امداد روانہ کر دی ہے۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق اس امدادی سامان کو لے کر جانے والی پہلی پرواز کے ذریعے فوری نتائج دکھانے والی تقریبا ایک ملین کورونا ٹیسٹنگ کِٹس بھی بھیجی گئی ہیں۔ وائٹ ہائوس کے ذرائع نے بتایا کہ ایک امریکی فوجی طیارے کے ذریعے بھیجی جانے والی یہ امداد جمعرات کو بھارت پہنچی ہے۔دریں اثنا بھارت میں کورونا وائرس کے سبب ہر طرف خوف کے سائے نظر آنے لگے، اموات کی بڑھتی تعداد نے لوگوں کو غیر یقینی کی صورتحال میں ڈال دیا۔بھارتی ٹی وی کے مطابق مریضوں کی تعداد بڑھنے پر ایمبولینسیں کم پڑ گئیں، آندھرا پردیش میں ایمبولینس نہ ملنے پر بیٹے کو آخری رسومات کیلیے ماں کی لاش بائیک پر لے جانا پڑی۔مہاراشٹرا کے ایک علاقے میں بائیس لاشوں کو ایک ہی ایمبولینس میں ڈال کر آخری رسومات کیلئے منتقل کیا گیا۔ جس پر عوام نے حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا، مہاراشٹرا میں ویکسین بھی کم پڑنے لگی۔مرکزی ویکیسین سینٹر میں ویکسین نہ ملنے پر لوگوں نے احتجاج کیا۔ایک دن میں کورونا کے 3 لاکھ 60 ہزار نئے مریض سامنے آگئے، جبکہ مزید 3 ہزار 293 اموات ہوگئیں، جس کے بعد مرنے والوں کی مجموعی تعداد 2 لاکھ سے زیادہ ہوگئی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.