ماحولیاتی نظام کا بے رحمانہ بگاڑ ، رحمان ملک نے گلوبل وارمنگ کے بڑےخطرے کی نشاندہی کرتے ہوئے حل بھی بتادیا

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما اور سابق وزیرِداخلہ سینیٹر رحمان ملک نے کہا ہے کہ سماجی و اقتصادی ترقی کے تعاقب میں زمین ناقابل تلافی نقصان اٹھا چکی ہے،انڈسٹرلائزیشن، جنگلات کی کٹائی اور نئے درخت نہ لگانے سے ہم اپنے آنے والوں نسلوں کیساتھ ظلم کر رہے ہیں،ہمارے ماحول کا مزید گلوبل وارمنگ سے بچنا اب قریب قریب ناممکن ہو چکاہے،آج دنیا کی تمام اقوام پر فرض ہے کہ ماحولیاتی توازن کو برقرار رکھنے کے لئے اپنا کردار ادا کرے،یوم ارتھ ہماری ذمہ داری کی یاد دہانی ہے کہ ماحولیاتی نظام کے بے رحمانہ بگاڑ کو کیسے روکا جائے؟۔

یوتھ کونسل پاکستان کی جانب سے’ارتھ ڈے کانفرنس‘ سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے سینیٹر رحمان ملک کا کہنا تھاکہ ارتھ ڈے کانفرنس میں دنیا بھر سے متحرک نوجوانان حصہ لے رہے ہیں، اس اہم موضوع پر بین القوامی کانفرنس منعقد کرنے پر یوتھ کونسل کے نوجوانوں کا شاباش دیتا ہوں، ہر سال 22 اپریل کو دنیا بھر میں ماحولیات اور زمین سے محبت کااظہارکیاجاتاہے،یوم ارتھ ہماری ذمہ داری کی یاددہانی ہےکہ ماحولیاتی نظام کےبےرحمانہ بگاڑکوکیسےروکاجائے؟۔ انہوں نے کہا کہ اللہ تعالی نے ساری مخلوقات میں انسان کو اشرف بنایا ہے، زمین کی اہمیت کا اندازہ اس بات سے لگایا جائے کہ اللہ تعالی نے اپنے اشرف المخلوقات کو زمین پر بسایا، پھر زمین سے اللہ تعالی نے اسکے لئے ہر قسم کی خوراک و نعمتیں پیدا کیں،انسان کی ذمہ داری تھی کہ وہ ماحول کی حفاظت کو یقینی بناتا،افسوس کہ ترقی اور ٹیکنالوجی کی دوڑ میں ہم نے اپنی زمین کیساتھ انصاف نہیں کیا۔

رحمان ملک نےکہاکہ اس سال ارتھ ڈے کاموضوع”ہماری زمین کو بحال کرو”ہے،آج پورے اقوام پرفرض ہےکہ ماحولیاتی توازن کو برقرار رکھنے کے لئے اپنا کردار ادا کرے، گلوبل درجہ حرارت میں اضافے کے اثرات انسانی قدرتی ماحول کو پہلے ہی نقصان پہنچا چکا ہے، مزید درجہ حرارت میں اضافے سے تباہ کن اثرات پڑیں گے، انسانی آبادی اور آب و ہوا کی تبدیلی ایک دوسرےسےجڑے ہوئےہیں،ہراضافی فردماحول میں کاربن کےاخراج میں اضافہ کرتاہے، انڈسٹرلائزیشن، جنگلات کی کٹائی اور نئے درخت نہ لگانے سے ہم اپنے آنے والوں نسلوں کیساتھ ظلم کر رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہر سال عالمی آبادی میں 80 ملین سے زائد افراد کا اضافہ ہو رہا ہے، 2050 تک دو ارب اور مزید 2100 تک ڈھائی ارب زیادہ افراد ہوں گے،ہمارے ماحول کا مزید گلوبل وارمنگ سے بچنا اب قریب قریب ناممکن ہو چکاہے،گلوبل وارمنگ نےموسموں میں تغیرو تبدیلیاں لاچکےہیں،سماجی و اقتصادی ترقی کے تعاقب میں زمین ناقابل تلافی نقصان اٹھا چکی ہے،

ہم سب کو زمین اور ماحولیات بچانے کے لئے آپس میں مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے،مجھے یقین ہے کہ صحتمندانہ سرگرمیاں جیسے آج اس کانفرنس کے انعقاد سے لوگوں میں آگاہی بڑھے گی،آئیے آج ہم اپنی آنے والی نسلوں کے لئے ایک بہتر زمین دینے کا عزم کریں، آئیے ‘اپنی زمین کی بحالی’ کے لئے مل کر کام کرنے کا وعدہ کریں، زیادہ سے زیادہ درخت و سبزہ اگائے اور اردگرد کے ماحول کو آلودگی سے صاف رکھیں، درخت لگانے سے نہ صرف ماحول بہتر ہوگا بلکہ ذریعہ معاش بھی ہوگا، اقوام متحدہ قرارداد لائے کہ ہر ملک سالانہ اتنے درخت لگائے گا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.