رمضان بازاروں میں چینی کے خریداروں کی لمبی قطاروں پرلاہور ہائیکورٹ کا اظہار برہمی

انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہورہی ہے ، 15روپے کے پیچھے آپ نے عوام کو بھیکاری بنا دیا ، عدالت نے کل تک چینی کے خریداروں کی لگی لائنیں ختم کرنے کا حکم دے دیا
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین ۔ 20 اپریل2021ء) رمضان بازاروں میں چینی کے خریداروں کی لمبی قطاروں پرلاہور ہائیکورٹ نے اظہار برہمی کردیا۔ تفصیلات کے مطابق عدالت نے رمضان بازاروں میں چینی کی خریداری کے لیے شہریوں کی لمبی لائنوں کا نوٹس لیتے ہوئے کل تک چینی کے خریداروں کی لگی لائنیں ختم کرنے کا حکم دے دیا ، رمضان بازاروں میں چینی کی خرایداروں کی لائنوں سے متعلق کل تک رپورٹ بھی طلب کرلی گئی۔
اپنے ریمارکس میں لاہور ہوئی کورٹ نے کہا کہ رمضان بازاروں میں چینی کی خریداری کے لیے لمبی لمبی لائنیں نہیں لگنی چاہیے ، یہ انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہورہی ہے ، 15روپےکے پیچھے آپ نے عوام کو بھیکاری بنا دیا ہے، اگر انسانی وقار متاثر کرنا ہے تو کسی کے گھر کے باہر سے چینی لینے دیں ، یہاں عدالت میں حلف نامہ جمع کروائیں کہ لائنیں نہیں لگیں گی۔
دوروان سماعت عدالت نے سرکاری وکیل سے استفسار کیا کہ چینی کی دکانوں پر لوگوں کی لائنیں کیوں لگوائی جارہی ہیں؟ عام خریدار کو 85 روپے قیمت پر چینی کیوں نہیں مل رہی؟ حکومت نے جوکہا وہی قیمت مقرر کروا دی؟ جس پر سرکاری وکیل نے جواب دیا کہ لوگوں کو چینی 85 روپے میں مل رہی ہے ، اس پر عدالت نے کہا کہ میڈیا پر خبریں آپ کے بیان سے مختلف ہیں ، اگر بات مختلف ہوئی تو آپ کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کریں گے۔
علاوہ ازیں چینی کی 85 روپے فی کلو پر بلا تعطل ترسیل کے لیے ضلعی حکومت نے بڑا فیصلہ کر لیا ، شہر میں 100 سے زائد شوگر سیل پوائنٹ قائم کیے جائیں گے ، اس حوالے سے کمشنر لاہور نے ڈی ‏سی کو شوگر سیل پوائنٹ قائم کرنے کی ہدایات جاری کر دی ہیں ، ‏ کمشنر لاہور محمد عثمان کا کہنا ہے کہ شہرمیں چینی دستیابی یقینی بنانے کے لیے سیل پوائنٹ قائم ‏کیے جائیں، رمضان بازاروں میں بھی چینی کی باآسانی دستیابی ہونی چاہیئے ، محمدعثمان کا کہنا تھا کہ عوام کی سہولت اولین ترجیح ہے، انتظامیہ کوئی کسراٹھا نہ رکھے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.