کورونا کے انتہائی نگہداشت مریضوں کی تعداد 4500 سے بڑھ گئی ، اسد عمر

یہ تعداد گزشتہ سال جون سے 30 فیصد زیادہ ہے ، ہسپتال کورونا مریضوں سے بھر گئے ہیں ، شہری ایس او پیز پر عمل نہ کرکے بہت بڑی غلطی کر رہے ہیں ، سربراہ این سی او سی کا ٹویٹ
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار ۔ 19 اپریل2021ء) وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عمر نے کہا ہے کہ پاکستان میں کورونا کیسز میں تیزی سے اضافہ ہورہاہے ، کوروناکیسز میں اضافے کے باعث ہسپتالوں پر دباوَ بڑھ رہا ہے ، شہری ایس او پیز پر عمل نہ کرکے بہت بڑی غلطی کر رہے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری کیے گئے اپنے پیغام میں انہوں نے کہا کہ ہسپتال کورونا مریضوں سے بھر گئے ہیں ، متاثرہ مریضوں کی تعداد مسلسل بڑھ رہی ہے ، جب کہ انتہائی نگہداشت مریضوں کی تعداد 4500 سے بڑھ گئی، یہ تعداد گزشتہ سال جون سے 30 فیصد زیادہ ہے ، بڑھے کیسز کے باعث اکسیجن کی سپلائی انتہائی دباؤ میں ہے، کیوں کہ ایس او پیز پر عملدرآمد کم ہو رہا ہے، ایس او پیز پر عمل نہ کر کے ہم بڑی غلطی کر رہے ہیں۔
خیال رہے کہ پاکستان میں کورونا وائرس کی تیسری لہر کی شدت تاحال برقرار ہے اور ملک کے کئی شہروں میں وینٹی لیٹرز کم پڑنے لگے ، صوبہ خیبر پختونخوا کے شہر نوشہرہ میں کورونا مریضوں کے لئے دستیاب سو فیصد وینٹی لیٹرز پر عالمی وباء کے مریض موجود ہیں ، پشاور میں خیبرٹیچنگ ہسپتال میں تمام 106 بیڈز بھی کورونا مریضوں سے بھر گئے ہیں ، جس کے بعد کورونا کے بڑھتے کیسز کے پیش نظربیڈز میں اضافہ کیا جارہا ہے جب کہ گوجرانوالہ میں 88 فیصد وینٹی لیٹرکورونا مریضوں کےزیراستعمال ہیں ، ملتان اور لاہورکے 81فیصدوینٹی لیٹر پر کورونامریضوں کا علاج کیا جارہا ہے جب کہ 24گھنٹوں کےدوران انتقال کرنےوالوں میں 19وینٹی لیٹرزپرتھے ، بتایا گیا ہے کہ ملک بھرکے630 اسپتالوں میں کوروناکے5 ہزار349مریض داخل ہوئے ، جس کی وجہ سے مردان میں 77فیصد ، پشاور میں 74 فیصد اور گجرات میں71 فیصد آکسیجن بیڈز پر کورونا مریض موجود ہیں ، جب کہ گوجرانوالہ کے 85 فیصد آکسیجن بیڈز پر کورونا مریض ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.