معاون خصوصی برائے پٹرولیم کے بعد حکومت نے ایک اور اہم عہدیدار کو فارغ کر دیا

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن )گزشتہ روز وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے پٹرولیم ندیم بابر سے استعفیٰ لے لیا گیاہے تاہم آج شکایات کے انبار اور بے باقاعدگیوں کے بعد وفاقی حکومت نے ایک صدارتی آرڈیننس کے ذریعے ایچ ای سی کے چیئرمین ڈاکٹر طارق بنوری کو ان کے عہدے سے قبل از وقت فارغ کردیا ہے۔

شکایات کے انبار اور بے قاعدگیوں کے بعد وفاقی حکومت نے ایک صدارتی آرڈیننس کے ذریعے اعلی تعلیمی کمیشن آف پاکستان کے چیئرمین ڈاکٹر طارق بنوری کو ان کے عہدے سے قبل از وقت فارغ کردیا ہے جس کا نوٹیفیکیشن جاری کردیا گیا ہے۔آرڈیننس کے ذریعے اعلی تعلیمی کمیشن کے ایکٹ میں ترمیم کرنے ہوئے چیئرمین کے عہدے کی مدت چار سے کم کرکے دو سال کردی گئی جبکہ فارغ کیے گئے چیئرمین اپنے عہدے کے چار میں سے تین سال پورے کرچکے تھے۔

بتایا جارہا ہے کہ ڈاکٹر طارق بنوری کو ہٹانے کی سب سے بڑی وجہ 15 کی تعداد میں بھاری تنخواہوں پر کنسلٹنٹ کی تعیناتی بنی۔ کہا جارہا ہے کہ ان میں سے ایک بھی کنسلٹنٹ کی تقرری میں طے شدہ قواعد کو ملحوظ خاطر نہیں رکھا گیا۔ایک کنسلٹنٹ کی تنخواہ 8 لاکھ روپے مقرر کی گئی اور کئی کو کچھ عہدوں کا اضافی چارج بھی دے دیا گیا جس پر نیب نے بھی نوٹس لے کر ایچ ای سی سے وضاحت طلب کی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.