حج کرنے کے لیے کورونا ویکسین لگوانا ضروری قرار دے دیا گیا حجاج کرام ماسک کا استعمال لازمی کریں گے اور انہیں قرنطینہ بھی ہونا پڑے گا،سعودی حکومت

ریاض (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 مارچ2021ء) ساری دنیا میں کورونا وبا اس وقت عروج پر ہے۔اس سے نمٹنے کے لیے کہیں لاک ڈائون تو کہیں سختیان نافذ کی گئی ہیں۔کورونا وبا کے دنوں میں دوسرا حج آ چکا ہے ا ور اس بار بھی حج کے دنوں میں سخت قواعد و ضوابط لاگو کر دیے گئے ہیں۔

لوگوں کی تعداد بھی پہلے سے کم ہو گی اور اس بار ماسک کااستعمال اور ویکسی نیشن کے لیے بھی سختی کی جا رہی ہے۔اس حوالے سے سعودی حکومت نے نئے ایس او پیز جاری کر دیے ہیں جن پر عملدرآمد سختی سے کرائے جانے کا عندیہ دے دیا گیا ہے۔حج 2021 کے لیے سعودی عرب کی جانب سے قواعد و ضوابط جاری کر دیے گئے۔تفصیلات کے مطابق سعودی وزارت صحت نے عازمین کے لیے منظور شدہ کرونا ویکسین کی شرط لگا دی ہے۔سعودی وزارت صحت کا کہنا ہے کہ عازمین حج کو کرونا ویکسین ذوالحجہ سے قبل لگوانی لازمی ہوگی، عازمین ذوالحجہ سے قبل کرونا ویکسی نیشن کرائیں۔ سعودی وزارت صحت کے مطابق بیرون ملک سے آنے والے عازمین کا دوبارہ کرونا ٹیسٹ ہوگا، اور عالمی ادارہ صحت کی منظور شدہ ویکسین لگانے کا مصدقہ ثبوت دینا ہوگا، جس میں یہ وضاحت کی گئی ہو کہ مملکت آمد سے 2 ہفتے پہلے ویکسین لگائی گئی ہے۔جاری اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ حج سیزن میں کام کرنے والے منظور شدہ ویکسین کی خوراک حاصل کر چکے ہوں، اور حج سیزن میں ورکرز مستقل طور پر ماسک لگانے کے پابند ہوں گے۔وزارت صحت نے اعلامیے میں کہا ہے کہ زیادہ سے زیادہ 72 گھنٹے قبل پی سی آر ٹیسٹ کرانا لازمی ہوگا، جب کہ مملکت سعودی عرب میں پہنچنے والے عازمین حج کو 72 گھنٹے کے لیے قرنطینہ کیا جائے گا۔48 گھنٹے بعد مقررہ و منظور شدہ فیلڈ سروس ٹیمیں عازمین کا دوبارہ ٹیسٹ کریں گی، ذوالحجہ سے قبل مکہ، مدینہ میں 60 فی صد تک مقررہ عمر کے افراد کی ویکسی نیشن ہوگی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.