نجی شعبے کیلئے 160 فیصد مہنگی کورونا ویکسین، فواد چوہدری بھی میدان میں آگئے

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ نجی شعبے کو کورونا ویکسین کی درآمد کی اجازت اس لیے دی گئی ہے تاکہ جو لوگ لائن میں نہیں لگنا چاہتے وہ پیسے دے کر ویکسین لگوا سکیں۔

ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کا کہنا تھا کہ حکومت تمام شہریوں کو مفت ویکسین لگانے کا پہلے ہی اعلان کر چکی ہےلیکن کروڑں لوگوں کو ویکسین ایک منظم طریقے سے ہی لگائی جا سکتی ہے۔ ویکسین کی پرائیویٹ طور پر درآمد کی اجازت اس لئے دی گئی ہے تاکہ جو لوگ لائن میں نہیں لگنا چاہتے وہ پیسے دیں اور ویکسین لگوا لیں، اس پر اعتراض کی وجہ سمجھ نہیں آئی۔

خیال رہے کہ ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل نے نجی شعبے کو کورونا ویکسین کی درآمد کی اجازت دینے پر خدشات کا اظہار کیا تھا۔ ٹرانسپیرنسی کاکہناہے کہ نجی شعبے کو کورونا ویکسین درآمد کی اجازت کرپشن کا نیا باب کھولے گی ،خدشہ ہے کہ سرکاری کورونا ویکسین نجی ہسپتالوں میں لگائی جائے گی۔

ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل نے کہاہے کہ پاکستان میں نجی شعبے کو روسی ویکسین کی قیمت عالمی مارکیٹ سے 160 فیصد اضافی دی گئی ،ٹرانسپیرنسی نے اعتراض کرتے ہوئے کہاکہ نجی شعبے کو انتہائی مہنگے داموں کورونا ویکسین لگانے کی اجازت دی گئی،دنیا بھر میں حکومتیں اپنے عوام کو مفت کورونا ویکسین دے رہی ہیں ،پاکستان پہلا ملک ہے جس نے نجی شعبے کو کورونا ویکسین درآمد کی اجازت دی ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.