اصلاحات کیلئے مل بیٹھنے کی دعوت دیدی

پی ڈی ایم کا لانگ مارچ ملتوی ، حکومت نے اپوزیشن کو اصلاحات کیلئے مل بیٹھنے کی دعوت دیدی
اپوزیشن کا لانگ مارچ سے پیچھے ہٹنا اچھی بات ہے ، پارلیمان میں ایک قدم آگے بڑھیں اور انتخابی اصلاحات سے بات چیت کا آغاز کریں ، آئیں نئے الیکشن قوانین اور الیکشن کمیشن کی تشکیل کرتے ہیں ، وفاقی وزیر فواد چوہدری کا ٹویٹ

اسلام آباد (17 مارچ 2021ء ) وفاقی حکومت نے اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کی جانب سے حکومت مخالف لانگ مارچ ملتوی کرنے کا خیرمقدم کرتے ہوئے اپوزیشن کو اصلاحات کیلئے مل بیٹھنے کی دعوت دیدی۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا ہے کہ سیاسی استحکام ملک کی ضرورت ہے، اچھی بات ہے کہ اپوزیشن لانگ مارچ سے پیچھے ہٹی ہے ، پارلیمان میں ایک قدم آگے بڑھیں اور انتخابی اصلاحات سے بات چیت کا آغاز کریں۔سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے ایک بیان میں انہوں نے اپوزیشن کو دعوی دی ہے کہ آئیں مل کر نئے الیکشن قوانین اور الیکشن کمیشن کی تشکیل کرتے ہیں ، چوں کہ عدالتی اور انتظامی اصلاحات وقت کی اہم ضرورت ہیں ، اس سلسلے میں بھی اپوزیشن تجاویز دے۔خیال رہے کا پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے 26 مارچ کو ہونے والا لانگ مارچ ملتوی ہونے کا اعلان کر دیا، اسلام آباد میں پی ڈی ایم کے سربراہی اجلاس کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ استعفوں کے بغیر لانگ مارچ نہیں ہو گا، مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ لانگ مارچ کو استعفوں سے جوڑا گیا تھا ، فضل الرحمان میڈیا سے مختصر بات کر کے ڈائس سے چلے گئے، انہوں نے کہا کہ 9 جماعتیں استعفوں کے حق میں ہیں لیکن پاکستان پیپلز پارٹی کو اس پر تحفظات ہیںاور انہوں نے وقت مانگا ہے جس کی بناء پر 26مارچ کا لانگ مارچ ملتوی تصور کیا جائے۔ مولانا فضل الرحمان آج پی ڈی ایم اجلاس کے بعد پریس کانفرنس میں نہیں آنا چاہتے تھے، سب کے اصرار پر کانفرنس میں آئے، پی ڈی ایم اتحاد ابھی ٹوٹنا نہیں ہے ، پیپلزپارٹی نے وقت مانگا ہے، پی ڈی ایم جواب کا انتظار کرےگی ، پی ڈی ایم اجلاس میں پیپلزپارٹی کا رویہ غیرجمہوری تھا ، اجلاس میں 9 جماعتیں استعفوں کے حق میں اورپیپلزپارٹی مخالف تھی، پیپلزپارٹی جمہوریت جمہوریت کہتے تھکتی نہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.