شہباز گل پر سیاہی انڈیلنے والا نوجوان کون ہے اور کام کیا کرتا ہے؟اس وقت اس کی حالت کیسی ہے اور اسے کہاں رکھا گیا ہے؟تفصیلات سامنے آ گئیں

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل پر لاہور ہائی کورٹ میں پیشی کے موقع پر ن لیگی کارکن نے چہرے پر سیاہی پھینک دی جبکہ وہاں موجودخاتون کارکن نے معاون خصوصی پر انڈا اچھال دیا ،تحریک انصاف کے کارکنوں نے موقع پر ہی ن لیگی متوالے کی خوب دھلائی کی اور اس کا سر کھول دیا جبکہ پولیس نے نوجوان کو حراست میں لیتے ہوئے پولیس سٹیشن مزنگ منتقل کردیا ہے ،شہباز گل پر سیاہی انڈیلنے والا نوجوان کون ہے اور کام کیا کرتا ہے اور کس لیگی رہنما کے ساتھ اس کے مراسم ہیں ؟تفصیلات سامنے آ گئیں ۔

لاہور ہائی کورٹ میں ڈاکٹر شہباز گل پر سیاہی انڈیلنے والے ن لیگی کارکن میاں عباس کا تعلق لاہور کے علاقے ماڈل کالونی فردوس مارکیٹ گلبرگ سے ہے اور وہ فردوس مارکیٹ کے علاقے میں عباس کیبل نیٹ ورک کے نام سے کام کرتا ہے،کئی سالوں سے ن لیگ کے جلسوں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینے والے ن لیگی ورکر میاں عباس خواجہ احمد حسان اور حافظ میاں نعمان کی الیکشن مہم میں کافی سرگرم رہا ہے جبکہ مریم نواز شریف کے جلسوں اور جلوسوں میں بھی وہ شریک ہوتا رہا ہے ۔ڈاکٹر شہباز گل پر سیاہی پھینکنے کے الزام میں گرفتار میاں عباس کو اس کے دو ساتھیوں سمیت پولیس سٹیشن مزنگ میں رکھا گیا ہے۔

ن لیگی ورکرز کا کہنا ہے کہ تحریک انصاف کے کارکنوں کی جانب سے لاہور ہائی کورٹ میں ہونے والے تشدد سے میاں عباس کی پسلیاں ٹوٹ چکی ہیں جبکہ بازو بھی فریکچر ہوا ہے تاہم پولیس نے اسے طبی امداد فراہم کرنے کی بجائے تاحال مزنگ تھانے کے ایک کمرے میں بند کیا ہوا ہے جہاں اس کی حالت خراب ہے۔دوسری طرف پولیس ذرائع نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ میاں عباس کو طبی امداد فراہم کرتے ہوئے اس کی مرہم پٹی کر دی گئی ہے ،قانون کے مطابق اس کے خلاف کارروائی کی جائے گی ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.