وزیراعظم کے بھانجے کی پولیس افسر کو دھکے دینے کی ویڈیو ، حسان نیاز ی گلبر گ میں کیا کر رہے تھے اور دھکا کیوں مارا؟ بیان جاری کر دیا

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )گزشتہ روز صوبائی دارالحکومت کے علاقے گلبرگ مین بلیوارڈ میں ریسٹورنٹس کی بندش کے خلاف ریسٹورنٹ مالکان نے احتجاجی مظاہرہ کیا جس میں وزیراعظم عمران خان کے بھانجے اور حفیظ اللہ نیازی کے صاحبزادے حسان نیازی بھی شریک ہوئے ،احتجاج کے دوران حسان نیازی کی ایس ایچ او کے ساتھ تلخ کلامی ہوئی اور انہوں نے پولیس افسر کو دھکے بھی مارے ۔

اس واقعہ کی ویڈیو سولش میڈیا پر تیزی سے وائرل ہوئی اور اسے سینئر صحافی منظور علی خان نے شیئرکرتے ہوئے کہا کہ ” وزیراعظم عمران خان کے بھانجے نے لاہور میں ایک احتجاج کے دوران پولیس افسر کو دھکے مارے ،کیا سی سی پی او لاہور کوئی ایکشن لیں گے؟ “ ۔

منصور علی خان کے ٹویٹر پر پیغام کے بعد حسان نیازی بھی میدان میں آئے اور انہوں نے جوابی ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ ” یہ میسج ’ پٹوری علی خان ‘ کیلئے ہے ، میں وہاں اپنے دیہاڑی دار ملازمین کیلئے بطور ریسٹورنٹ مالک کے موجود تھا اور پنجاب حکومت کے خلاف احتجاج کر رہا تھا ، مجھے دھکا دیا گیا جس پر میں نے جواب میں دھکا دیا تاکہ ہم لبرٹی جاسکیں ، جب آپ کے لیڈر نیب پر حملہ کرتے ہیں تو آپ ان کا دفاع کرتے ہیں ، کیسے کر لیتے ہیں یہ۔“

واضح رہے کہ اس سے قبل دسمبر 2019میں سانحہ پی آئی سی کے دوران بھی جب وکلا برادری نے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیو لوجی پر حملہ کیا تھا تو حسان نیاز ی کی ایک ویڈیو سامنے آئی تھی جس میں وہ پولیس کی گاڑی کو آگ لگا رہے تھے پھر جنو ری 2020میں حسان نیازی کی ایک گاڑی سے ٹکر ہو گئی تھی جس پر حسان نیازی نے اپنی گاڑی سے باہر نکل کر دوسری گاڑی کو ٹھوکریں ماری تھیں اور کار سوار کو بھی گالیاں دی تھیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.